پیر، 12 نومبر، 2018

رات کوقبرستان جانے کا کیاحکم ہے؟

رات کو قبرستان جانے کا کیاحکم ہے؟ کیا حضور صلی اللہ علیہ وسلم اور صحابہ کرام سے رات کو قبرستان جانا ثابت ہے؟ تفصیل ملاحظہ کیجئے 


ہفتہ، 20 اکتوبر، 2018

نسوار کے نقصانات اور نسوار منہ میں رکھ کر تلاوت کرنے کا شرعی حکم

کیا نسوار اور اس قسم کی کوئی چیز منہ میں رکھ کر نماز پڑھی جاسکتی ہے ؟ کیا ایسی حالت میں تلاوت جائز ہے؟ 
اس کے جواب کو سمجھنے سےپہلے ضرورت ہے کہ ہم اس کے متعلقہ احادیث اور آیات کو ایک نظر دیکھ لیں

اللہ تعالی نے ارشاد فرمایا۔ ان اللہ یحب التوابین ویحب المتطہرین۔ بے شک اللہ تعالی توبہ کرنے والوں اور پاک رہنے والوں کو پسند کرتاہے۔
ایک اور جگہ ارشاد ہے اللہ تعالی تم پر تنگی کرنا نہیں چاہتے اور لیکن اللہ تعالی چاہتے ہیں کہ تمہیں پاک کریں۔
اسلام مین صفائی کی کتنی اہمیت ہے اس کا اندازہ اس حدیث سے بھی لگایا جاسکتاہے کہ صفائی نصف ایمان ہے۔

اب آپ کے سوال کا جواب یہ ہے کہ منہ میں نسوار رکھ کر تماز وتلاوت ناجائز ہے کیونکہ ایسی چیزیں منہ میں بدبو پیدا کرتی ہیں جو اسلام کے فلسفہ طہارت کے خلاف ہے 

جمعرات، 18 اکتوبر، 2018

پوجااور عبادت میں فرق

پوچا اور عبادت میں ایک بنیادی فرق موجود ہے۔ عام طور پر لوگ یہی سمجھتے ہیں کہ ہندی میں جس کو پوجاکہتے ہیں ، اردو میں وہی لفظ عبادت کہلاتاہے حالانکہ ایسی بات نہیں ۔ ان میں بہت بڑا فرق موجود ہے۔ پوجا ہندی یا سنسکرت زبان کا لفظ ہے ، جس کے معنی خدا کی عبادت کرنا ہے۔ اگرچہ ان لوگوں کے ہاں خدا کئی ہیں، لیکن یہ لفظ صرف عبادت خدا ہی میں منحصر ہے۔ اس کے برعکس اسلام کا تصورعبادت ایک عظیم مفہوم رکھتاہے۔ حقیقت یہ ہے کہ اسلام میں ہر نیک عمل عبادت کہلاتا ہے اس میں نماز بھی شامل ہے اور روزہ وحج وغیرہ بی شامل ہیں۔ اسی طرح بندوں سے اور والدین سے حس سلوک بھی عبادت کہلاتاہے۔ 

جمعرات، 4 اکتوبر، 2018

بیوی کی بہن سے تعلق رکھنا

بیوی کی بہن جس کو ہماری زبان میں سالی کہاجاتاہے، اس سے تعلقات استوار کرنے کی شریعت میں اجازت نہیں ہے۔ کیا ایسے کرنے سے نکاح ٹوٹ جاتاہے؟ تو اس کا جواب تو یہ ہے کہ نکاح برقرار رہتاہے تاہم ایسے کرنے والا گناہ کبیرہ کا مرتکب ہوتاہے۔ لہذا شدت سے ممانعت موجود ہے کہ ایسے کاموں سے بچاجائے۔ 

ہاں اگر شخص اس قسم کے تعلق کو جائز سمجھتا ہوں تو وہ دائرہ اسلام سے خارج ہے۔ تجدید ایمان کی ضرورت ہوگی کیونکہ اس نے حرام کو حلال سمجھا۔ 

جمعرات، 27 ستمبر، 2018

حرمت رضاعت کب ثابت ہوتی ہے؟

السلام علیکم 
میراسوال یہ ہے کہ مجھے میری تائی نے ایک سال کی عمر میں دودھ پلایا ۔ ان کے بقول انہوں نے پانچ مرتبہ چوسنے کے کم مقدار سے دودھ پلایاتھا۔ تین سال بعد ان کے ہاں بیٹی کی پیدائش ہوئی اب پوچھنا یہ ہے کہ ان کی بیٹی میری رضاعی بہن ہے یا نہیں۔ اور کیا میرا اس کے ساتھ نکاح کرنا جائز ہے یا نہیں۔ یہ سوال اس لیے کررہا ہوں کہ کہیں پڑھا ہے کہ حرمت رضاعت اس وقت ثابت ہوتی ہے جب پانچ مرتبہ یا اس سے زائد مرتبہ عورت کا دودھ پیا جائے۔ 
جواب
دوسال اور چھ ماہ سے کم عمر کا بچہ جب کسی عورت کا دودھ پی لیے تو اس سے حرمت رضاعت ثابت ہوجاتی ہے۔ اس میں تعمیم ہے خواہ بچے نے چوسا ہو یا اس کے حلق میں ڈالا گیا ہو، کم پیا ہو یا زیادہ پیا ہو اس سے کوئی فرق نہیں پڑتا بس حرمت ثابت ہوجاتی ہے۔